December 10, 2015 - محمد سلیم
5 تبصر ے

لوٹ کے بدھو گھر کو آئے

السلام علیکم: کہنے کو تو یہ میرا اپنا بلاگ ہے مگر اس کو یوں سونا سونا کرنے میں میرا نہیں، میرے فیس بک اکاؤنٹ کا ہاتھ ہے۔ بلاگ پر لکھنے میں کسلمندی کیا آڑے آئی کہ فیس بک کے مزے ہو گئے، اس کا اتنا پیٹ بھرا کہ حساب نہیں مگر حاصل وصول کیا ہوا ہے برطرف، جو کچھ لکھا ہے اس کا کوئی ریکارڈ تک بھی نہیں ہے۔

بلاگ پر واپس لانے میں، میں جہاں ہوں، وہاں کی حکومت کی طرف سے فیس بک پر عائد پہلے سے پابندی کو مزید سخت اور اور اس تک رسائی حاصل کرنے کیلئے غیر قانونی (وی پی این) سافٹویئرز استعمال کرنے والوں کے خلاف سخت تادیبی کاروائی کرنے کا عندیہ دیا جانا ہے۔ ابتدائی طور پر کچھ لوگوں کے ٹیلفون نمبرز بلاک کیئے گئے ہیں، بعد ازاں ان کے ساتھ کیا کیا جائے گا کے بارے میں ابھی کچھ معلوم نہیں ہو پا رہا۔

میں جو کچھ فیس بک پر لکھ کر ڈالتا رہا ہوں اُسے یہاں بلاگ پر لکھ ڈالنے کیلئے ویسے تو اب میرے پاس صائب دلیل اور جواز ہے مگر میں اس کا سہرا یہاں کی حکومت  کے بعد اپنے پیارے بھائی نجیب عالم، محمد سعد، راجہ افتخار صاحب اور جناب محترم مصطفیٰ ملک کے سر باندھتا ہوں جنہوں نے کئی بار شفقت سے توجہ دلائی کہ جنابو یہ تحریر قابل بلاگ ہے جی، مگر میں ان کے فرمان پر عمل نا کر پایا۔

میں جلد ہی بلاگ پر ایک کیٹیگری (علیحدہ صفحہ) اس تمام میکرو بلاگنگ کیلئے بناؤں گا جس پر اب تک کی وہ فیس بکی تحریریں ہونگی جو یہاں ڈالے جانے سے رہ گئی تھیں۔ مجھے پورا یقین ہے کہ وہ سب کچھ آپ احباب کوناصرف بہت پہلے سے پڑھا ہوا لگے گا بلکہ کئی ایک پر تو مجھے اپنا حق ملکیت جتانے کیلئے بھی محنت کرنا پڑے گی۔ کیونکہ میری فیس بک وال سے چند بار شیئر اور سینکڑہ بھر لائک ہوجانے والی کئی تحاریر ایسی بھی  ہیں جو فیس بک پر دسیوں ہزار بار شیئر ہو کر خوب پھلی پھولی ہیں۔ انشاء اللہ – یار زندہ تو صحبت باقی۔ ملتے ہیں پھر۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست 5 تبصرے برائے تحریر ”لوٹ کے بدھو گھر کو آئے

  1. محترم آپ تو عید کا چاند ھو گئے۔ اگر ایف۔بی پر چینی جم گئی ھے تو کوئی بات نہیں۔ آپ کے لیئے ریموٹ ڈیسکٹوپ حاضر کیا جا سکتا ھے۔ وہ بھی فری میں۔۔۔۔

تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *