December 10, 2015 - محمد سلیم
1 تبصرہ

چین کے بارے میں جانیئے

بہت ساری جغرافیائی اور تاریخی حیرتوں کا مرقع یہ ملک، جسے جتنا کنگھالا جائے اتنا انوکھا لگے گا، آپ اس ملک کے بارے میں بہت جانتے ہونگے، تاہم یہ چند معلومات ہو سکتا ہے آپ کیلئے نئی ہوں:

1

مشرقی ایشیاء کے انتہائی کنارے اور بحیرہ اوقیانوس کے مغربی کنارے پر واقع اس ملک کی لگ بھگ پندرہ ملکوں کے ساتھ سرحدی ساجھے داری بنتی ہے۔ ان پندرہ ملکوں میں روس، قازخستان، کرغستان، تاجکستان، منگولیا، شمالی کوریا، ویت نام، لاؤس، میانمار، بھارت، بھوٹان، نیپال، پاکستان، افغانستان اور ہندوستانی تسلط میں آئی ریاست سکم شامل ہیں۔

2

چین چھیانوے لاکھ مربع میل رقبے والا ملک ہے، آسانی کیلئے یوں کہا جا سکتا ہے کہ چین زمین کے قابل استعمال حصے کا 1/15 رقبے یا بر اعظم ایشیا کے 1/4 رقبے کا مالک ہے۔ اس حساب سے چین روس اور کینیڈا کے بعد دنیا کا تیسرا سب سے بڑا ملک ہے۔ یورپ کے سارے ملکوں کے کل رقبے کو ملایا جائے تو لگ بھگ اتنا بنتا ہے جتنا اکیلے چین کا رقبہ ہے۔

3

چین چوکور ملک تو نہیں مگر پھر بھی اس کی شرقاً غرباً لمبائی 5200 کیلومیٹر جبکہ شمالاً جنوباً 5500 کلومیٹر بنتی ہے۔ اس کے نقشے کو بغور دیکھا جائے تو حیرت انگیز طور پر ایک بڑے مرغے کی ہوبہو تصویر نظر آتی ہے۔

4

چین 34 انتظامی حصوں میں تقسیم ہے جس میں 23 صوبے، 5 خود مختار علاقے، اور 4 براہ راست مرکزی حکومت کے زیر انتظام شہر (بیجنگ، شنگھائی، تیانجن اور چھانگ چنگ) ہیں۔ چین کے زیر انتظام دو خود مختار ملک ہانگ کانگ اور مکاؤ بھی شامل ہیں۔

5

چین ایک ارب اور چھتیس کروڑ نفوس کی آبادی کے ساتھ دنیا کا سب سے بڑا انسانی آبادی والا ملک ہے۔ واضح رہے کہ اس عدد میں مکاؤ اور ہانگ کانگ کی آبادی شامل نہیں ہے۔ سادہ الفاظ میں اس وقت دنیا بھر میں موجود ہر پانچ انسانوں میں ایک چینی ہے۔

6

چین 56 مختلف قومیتوں کے ساتھ دنیا کا سب سے منفرد ملک ہے، تاہم اتنی ساری قومیتوں اور تہذیبوں کے درمیان (ہان) لوگوں کا تناسب 92٪ کے ساتھ سب سے زیادہ ہے۔

7

چین ہر قسم کی ساخت اور اونچی نیچی زمین والا ملک تو ہے ہی، مگر میدانی علاقہ صرف 1/10 ہے جبکہ اس ملک کا  2/3 رقبہ پہاڑی ہے۔

8

واضح رہے کہ نیپال اور ہندوستان کے بعد چین بھی ہمالیہ کا ساجھے دار ملک ہے۔ دوسرے ملکوں میں تو ہمالیہ سطح سمندر سے محض 6000 میٹر تک ہی بلند ہے مگر چین اور نیپال کے ساتھ لگتی سرحدوں میں گھرا ہمالیہ 8848 میٹر تک بلند ہے۔

9

چین میں شرقاً غرباً بہنے والا دریا،  دریائے یانگزی 6300 کلومیٹر طویل ہے اور اس کی لمبائی دریائے نیل اور امیزون دریاؤں کے بعد تیسری سب سے بڑی طوالت بنتی ہے۔

10

چین کے شہر بیجنگ اور ہانگزو کے درمیان بہنے والی نہر دنیا کی سب سےلمبی مصنوعی اور دنیا کی سب سے پرانی قاعم و دائم نہر گرانڈ کینال 1800 کلومیٹر طویل ہے۔

بذریعہ فیس بک تبصرہ تحریر کریں

براہ راست ایک تبصرہ برائے تحریر ”چین کے بارے میں جانیئے

تبصرہ تحریر کریں۔

Your email address will not be published. Required fields are marked *