محفوظات برائے ”متفرقات“ زمرہ
لفظوں کا چناؤ
محمد سلیم نے Saturday، 19 November 2016 کو شائع کیا.

بادشاہ نے اپنی سلطنت میں ہرسُو ہرکارے بھیج کر فرمان جاری کرا دیا کہ کل سے اس کی رعایا میں موجود کوئی بھی عورت نا تو کسی قسم کا زیور پہنے گی اور نا ہی کسی قسم کا بناؤ سنگھار کرے گی۔   اس فرمان پر عمل کیا ہونا تھا جس نے بھی سنا ہنس […]

مکمل تحریر پڑھیے »


اپنا ایک کان کٹوانے سے پہلے یہ پڑھ لے
محمد سلیم نے Monday، 14 November 2016 کو شائع کیا.

 کہتے ہیں کہ ایک بادشاہ کی شادی کو عرصہ ہوگیا مگر گھر میں ولی عہد کی کمی ہی رہی تو اس نے سلطنت کے کونے کونے سے اپنے اور اپنی ملکہ کے علاج معالجے کیلئے حکیم بلوائے۔ مقدر میں لکھا تھا اور اللہ نے ملکہ کی گود ہری کر دی ۔ بیٹا پیدا ہوا تو […]

مکمل تحریر پڑھیے »


کل کے بادشاہ
محمد سلیم نے Wednesday، 19 October 2016 کو شائع کیا.

ایک عراقی کہتا ہے: ہم دنیا کی سب سے بڑی اور مضبوط اقتصادی قوت ہوا کرتے تھے، ہمارے ایک دینار کی قیمت گیارہ سعودی ریال ہوا کرتی تھی، اس دھرتی پر سب سے بڑا تیل کا ذخیرہ ہمارا ذخیرہ ہوا کرتا تھا۔ ہم ہی دنیا کی سب سے بڑی متمدن تاریخ اور علمی ورثے کے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


استاد پھر استاد ہوتا ہے
محمد سلیم نے Wednesday، 12 October 2016 کو شائع کیا.

پروفیسر صاحب انتہائی اہم موضوع پر لیکچر دے رہے تھے، جیسے ہی آپ نے تختہ سیاہ پر کچھ لکھنے کیلئے رخ پلٹا کسی طالب علم نے سیٹی ماری۔ پروفیسر صاحب نے مڑ کر پوچھا کس نے سیٹی ماری ہے تو کوئی بھی جواب دینے پر آمادہ نا ہوا۔ آپ نے قلم بند کر کے جیب میں […]

مکمل تحریر پڑھیے »


بیٹیاں
محمد سلیم نے Tuesday، 11 October 2016 کو شائع کیا.

بیٹیاں بیٹیوں کو رب کریم کی عطا و رحمت سمجھنا، ان سے شفقت، پیار اور رحمدلی والا معاملہ کرنا، ان کی تعلیم و تربیت کیلئے اپنے تئیں بھر پور کوشش کرنا، ان کے دکھ درد کو سمجھنا، ان کو وقت دینا، ان کی سننا، ان سے لاڈ پیار اور دلجوئی کرنا، ان کی عزت و […]

مکمل تحریر پڑھیے »


فیس بُک ایک اندھیرا کنواں
محمد سلیم نے Monday، 10 October 2016 کو شائع کیا.

آپ بھلے جیسا اچھا،  معیاری اور اصلاحی ادب تخلیق کریں، اگر اُسے شائع فیس بُک پر کر رہے ہیں تو آپ بے سود کام کر رہے ہیں۔ فیس بک میرے نزدیک ایک اندھیرا کنواں ہے جس میں علم کو بُرد کیا جا رہا ہے۔ بلاگ ایک بہترین پلیٹ فارم تھا نجانے کیوں کئی دوست اسے بھلا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


لوٹ کے بدھو گھر کو آئے
محمد سلیم نے Thursday، 10 December 2015 کو شائع کیا.

السلام علیکم: کہنے کو تو یہ میرا اپنا بلاگ ہے مگر اس کو یوں سونا سونا کرنے میں میرا نہیں، میرے فیس بک اکاؤنٹ کا ہاتھ ہے۔ بلاگ پر لکھنے میں کسلمندی کیا آڑے آئی کہ فیس بک کے مزے ہو گئے، اس کا اتنا پیٹ بھرا کہ حساب نہیں مگر حاصل وصول کیا ہوا ہے […]

مکمل تحریر پڑھیے »


میرے فیس بکی سٹیٹس (8)
محمد سلیم نے Friday، 17 October 2014 کو شائع کیا.

زندگی اتنی لمبی بھی نہیں‌ کہ ہر چیز کا تجربہ کیا جائے اور نا ہی اتنی چھوٹی ہے کہ ہر بات کو جھٹلا دیا جائے ہاں‌ اتنی خوبصورت تو ضرور ہے کہ اگر یہ جان لیا جائے کچھ بھی اس کے برابر یا اسکا متبادل نہیں‌ ہے۔ ٭٭٭٭٭٭ اس سے بڑھ کر تم اپنے دوست […]

مکمل تحریر پڑھیے »


میرے فیس بکی سٹیٹس (7)
محمد سلیم نے Tuesday، 21 January 2014 کو شائع کیا.

ابو لہب؛ ہاشمی، قریش کے شرفاء میں سے ایک،  لیکن جہنم کی بھڑکتی ہوئی آگ کا ایندھن، بلال بن رباح؛ غلام، حبشی، کالا کلوٹا، لیکن، سرکار صلی اللہ علیہ وسلم نے اُسکی کھڑاؤں کی آواز جنت میں سنی۔ تو پھر؛ کب تک آپ نے اپنے آپ کو بڑے قبیلے کا فرد شمار کر کے دھوکے میں رکھنا […]

مکمل تحریر پڑھیے »


میرے فیس بکی سٹیٹس (6)
محمد سلیم نے Thursday، 2 January 2014 کو شائع کیا.

پنکھا اپنی طرف سے ہوا بنا کر تو ہماری طرف نہیں پھینکتا، ہوا پہلے سے ہی موجود ہوتی ہے وہ بس اسے حرکت دیکر ہماری طرف دھکیلتا ہے۔ بالکل ایسے ہی ہم انسانوں کی خوشیاں ہوتی ہیں جو ہر وقت ہمارے آس پاس ساکن و موجود رہتی ہیں، بس ان کے مآخذ کو حرکت دیکر ایجاد […]

مکمل تحریر پڑھیے »